‘پاکستان زندہ باد’ کا نعرہ لگانے والی بھارتی خاتون پر بغاوت کا مقدمہ

بنگلور میں تقریب کے دوران امولیا نامی خاتون نے متنازع شہریت بل کے خلاف تقریر کے دوران ‘پاکستان زندہ باد’ کے نعرے لگانا شروع کر دیے تھے۔ (فائل فوٹو)

ارت کے شہر بنگلور میں ایک خاتون پر متنازع شہریت بل کے خلاف مظاہرے کے دوران پاکستان زندہ باد کا نعرہ لگانے پر بغاوت کا مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔
حیدر آباد سے رُکن پارلیمان اور مسلمان رہنما اسد الدین اویسی بھی اس تقریب میں موجود تھے۔ تاہم اُنہوں نے اس خاتون سے لاتعلقی کا اظہار کیا ہے۔
بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق ‘آئین بچاؤ’ کے نام سے منعقدہ تقریب میں اسد الدین اویسی کے علاوہ آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے رہنما بھی شریک تھے۔ اس دوران امولیا نامی خاتون نے متنازع شہریت بل کے خلاف تقریر کے دوران پاکستان زندہ باد کے نعرے لگانا شروع کر دیے۔
منتظمین نے خاتون کو روکنے اور مائیک چھیننے کی بھی کوشش کی۔ اسدالدین اویسی سمیت دیگر منتظمین نے کہا کہ آپ کیا بول رہی ہیں۔ آپ کو ایسا کہنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ اس دوران پولیس اہلکار نے اسٹیج پر پہنچ کر خاتون کو حراست میں لے لیا۔
بعدازاں پولیس نے خاتون کے خلاف دفعہ 124 اے، 153 اے اور بی کے تحت بغاوت کا مقدمہ درج کیا ہے۔ خاتون کو جمعے کو ہی مقامی عدالت میں پیش کیا گیا جہاں اُن کی درخواستِ ضمانت بھی خارج کر دی گئی ہے۔
بنگلور کے سینئر پولیس افسر بی رامیش نے بتایا کہ خاتون کے خلاف ازخود نوٹس لیتے ہوئے مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ خاتون کو 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوا دیا گیا ہے۔
بھارت کی حکمراں جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے اس واقعے پر اسدالدین اویسی سمیت دیگر منتظمین کو آڑے ہاتھوں لیا ہے۔

Please follow and like us:
0

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Social media & sharing icons powered by UltimatelySocial